Dhoka Poetry

اعتبار ضرور کریں دوسروں پر
لیکن کسی کو موقع نہ دیں کہ وہ آپ کو اندھا سمجھنے لگے

………….

اسے سفر میں دھوکہ تو ہم بھی دے سکتے تھے
مگر رگوں میں دوڑتی وفا سے بغاوت نہیں ہوتی

………….

ہم ان کی مجبوریوں کو سمجھتے رہے
اور وہ ہماری مجبوری کا فائدہ اٹھاتے رہے

………….

ڈر لگتا ہے اب ان لوگوں سے
جو کہتے ہیں میرا یقین کرو

………….

جھوٹ کے درختوں پر اعتبار کی چڑیا لوٹ کے نہیں آتی